donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Adil Hayat
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* دلوں کے چین کو خود ہی تباہ کرتے ہیں *

 

 غزل
 
 
دلوں کے چین کو خود ہی تباہ کرتے ہیں
یہ کیسے لوگ ہیں، کیسے نباہ کرتے ہیں
دعائیں جن کے وسیلے سے بار پاتی ہیں
کرم سے اپنے، گداؤں کو شاہ کرتے ہیں
ہمارے زخم بھی ناسور ہوگئے ہیں اب
سو اپنے زخموں پہ ہم بھی نگاہ کرتے ہیں
جو اپنے ہاتھوں سے سورج کو چھو نہیں سکتا
عروج پر وہ ترے آہ آہ کرتے ہیں
ہر ایک شعر پہ بجتی ہیں تالیاں عادل
بزرگ اب بھی مگر واہ واہ کرتے ہیں
 
*****************
 
 
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 368