donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Adil Hayat
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* زباں پہ لفظ جو آئے اسے کہا جائے *

 

غزل
 
 
زباں پہ لفظ جو آئے اسے کہا جائے
جواب اس کے سوالوں کا بھی دیا جائے
ترے خیالوں سے ہوکر تو میں گزرتا ہوں
کہ دل میں تیرے بھی پیکر مرا سما جائے
سنا ہے لہجے میں اس کے بہت صداقت ہے
چلو ملنگ کی باتوں کو بھی سنا جائے
بہت دنوں سے کوئی چھپ کے مجھ میں بیٹھا ہے
کبھی تو آنکھوں کو اپنی جھلک دکھا جائے
مری نگاہوں میں کتنی دشائیں روشن ہیں
مگر یہ کون بتائے کدھر چلا جائے
میں انتظار میں کس کے یہاں پہ بیٹھا ہوں
مری نگاہ میں سورج مرا ڈھلا جائے
ترے بھی لفظوں میں تاثیر اتنی ہو عادل
زباں سے نکلے تو پھر عرش تک صدا جائے
 
**********
 
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 389