donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Adil Hayat
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* ابھرتے ڈوبتے جذبوں میں آس رہنے دو¬ *

 

 غزل
 
 
ابھرتے ڈوبتے جذبوں میں آس رہنے دوں
ذرا سی دیر اسے اپنے پاس رہنے دوں
نظر میں ریت کا صحرا سما گیا ہے جب
اگی ہے ذہن میں میرے جو گھاس رہنے دوں
زمیں سے کٹ کے میں اپنی تو جی نہیں سکتا
مرے نصیب میں مٹّی نہ باس رہنے دوں
اگر ہو بس میں تو دریا کو خشک کرڈالوں
لبوں پہ اس کے ہمکتی سی پیاس رہنے دوں
درامید پہ آئے گا ایک دن کوئی
تو پھر یقین کو رکھ لوں، قیاس رہنے دوں
یہ کیا کہ ہر گھڑی ہنستا ہی رہتا ہوں عادل
کبھی تو دل کو میں اپنے اداس رہنے دوں
 
*************
 
 
 
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 345