donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Adil Hayat
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* رہِ حیات میں کوئی نشاں تو رہنے دوں *

 

 غزل
 
 
رہِ حیات میں کوئی نشاں تو رہنے دوں
نہیں ہے روشنی گھر میں دھواں تو رہنے دوں
اماں زمین پہ کس کو ملی، جو مجھ کو ملے
دیار یاد میں کوئی گماں تو رہنے دوں
یہ مانا زور ہے آندھی کا ان دنوں پھر بھی
دیا جلاؤں کہ شوقِ زیاں تو رہنے دوں
جتن کے بعد بھی ہوتا کہاں ہے کچھ حاصل
ہنر کو بیچ دوں، نام و نشاں تو رہنے دوں
ہوائے تیز نشانے خطا کرے گی بہت
قلم سے تیر چلاؤں کماں تو رہنے دوں
جلن کو دھوپ کی ٹھنڈک سمجھ لوں میں عادل
انا سفر میں بھی اک سائباں تو رہنے دوں
 
************
 
 
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 389