donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Adil Hayat
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* سلیقے سے اب اپنی زندگی کرلوں *

 

غزل
 
سلیقے سے اب اپنی زندگی کرلوں
وہ مالک ہے تو اس کی چاکری کرلوں
اندھیری رات گہری ہورہی ہے
جلا کر خون اپنا روشنی کرلوں
وہی تو شہر میں سب کا مسیحا ہے
کہو، اس سے میں کیسے دشمنی کرلوں
ذرا سی دیر سارے دکھ بھلا دوں میں
ذرا سی دیر خود سے دل لگی کرلوں
اکیلا پن مجھے اب بھی ستاتا ہے
در و دیوار ہی سے دوستی کرلوں
برائی کرنے سے اوروں کی اچھا ہے
کہ پہلے گھر میں اپنے شانتی کرلوں
مرا سایا ہی مجھ کو اب ڈراتا ہے
کسی سائے سے کیسے دشمنی کرلوں
مرے بچّے ہیں بھوکے پیٹ اے عادل
کہاں جاؤں میں کیسے خودکشی کرلوں
 
************
 
 
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 389