donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Kalim Akhtar
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* لطف اٹھاناتھا مجھے اے زندگی ـ’’ہفت *

 

غزل
 
لطف اٹھاناتھا مجھے اے زندگی ـ’’ہفتاب‘‘ کا
چکھ لیا مثر گانِ شبنم نے مزہ ’’زہر اب‘‘ کا 
پر توِ معراج سے روشن ہوا تمثالِ جاں
عکس ہے ہر چیز پر خورشید عالم تاب کا
قطرہء شبنم میں اک آئینئہ تمثال ہے
یہ کرشمہ ہے کسی عکسِ مئے تیزاب کا
سرخ بادہ سے کہاں سر سبز ہے رنگ سبو
جام آتش پی رہاہوں عشق کے خونناب کا
اے خدا کیسے سنبھالیں کشتیِ گرداب کو
موج زن دریاے سرکش ہے رخِ ’’موجاب‘‘ کا
منعکس ہوتاہے لیکن منعطف ہوتا نہیں
داغ ہے آئینۂ بازار پر ’’زنگاب‘‘ کا
تلخ گوئی، تلخ روئی، تلخ کامی میں کلیمؔ 
  جام     آتش    پی    رہا    ہوں     ان    د  نوں   ’’   تلخاب    ‘‘   کا
********
 
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 381