donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Kalim Akhtar
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* ملتا اگر شعور کو ادراکِ آرزو *

غزل

ملتا اگر شعور کو ادراکِ آرزو
ہم بھی زمیں سے دیکھتے افلاکِ آرزو
آ، پیکرِ لباسِ حیا! ’’برق رنگ‘‘ آ
ننگ وجود ہے مری پوشاکِ آرزو
یارو! ہمیں بھی دعوتِ مژگاں کرو کبھی
ہم بھی سمیٹتے خس و خاشاکِ آرزو
گل پیرہن ہو چاک تو خیاط کیا کریں
گو بے رفو ہے دامنِ صدچاکِ آرزو
اک توہی ناسمجھ ہے دلِ درد مندِ شوق
نادان کب سمجھتا ہے ادراکِ آرزو
برسوں ہوا سمجھ کے اڑایا کیا جسے
اک دن چراغِ گل بنا خاشاکِ آرزو
****

 
Comments


Login

You are Visitor Number : 382