donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Kalim Akhtar
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* بہت پیاسی ہے، پانی مانگتی ہے *

غزل

بہت پیاسی ہے، پانی مانگتی ہے
غزل اپنی جوانی مانگتی ہے
وہی باتیں پرانی مانگتی ہے
محبت چھیڑخانی مانگتی ہے
مرے دل کی کہانی مانگتی ہے
شبِ غم سخت جانی مانگتی ہے
ترنگو! جھیل کی فریاد سن لو
وہ دریا کی روانی مانگتی ہے
بجھا سکتے ہو تو اس کو بجھا دو
بدن کی آگ پانی مانگتی ہے
غزل گوئی نہیں کچھ کھیل صاحب!
غزل مبہم بیانی مانگتی ہے
ہمارے شہر کی مٹی بھی اخترؔ
بزرگوں کی نشانی مانگتی ہے
****

 
Comments


Login

You are Visitor Number : 410