donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Kalim Akhtar
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* شعلہ بن کر لہک رہا ہے کوئی *

غزل

شعلہ بن کر لہک رہا ہے کوئی
کتنا اندر سے پک رہا ہے کوئی
پھر صدا آرہی ہے ’’شوخ صفت‘‘
دل کے اندر چہک رہا ہے کوئی
خوشبوؤں سے مہک رہا ہے بدن
عرق گل چھڑک رہا ہے کوئی
چاندنی موج زن ہے آنکھوں میں
چاند بن کر چمک رہا ہے کوئی
جسم کندن سا ہوتا جاتا ہے
دل میں گویا دہک رہا ہے کوئی
بے خبر دل مچل اٹھا اخترؔ
بے تحاشہ لپک رہا ہے کوئی
****

 
Comments


Login

You are Visitor Number : 390