donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Kalim Akhtar
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* سرخی لبوں کی چھین لے اور پیاس رہنے *

غزل

سرخی لبوں کی چھین لے اور پیاس رہنے دے
کچھ دیر کے لیے مجھے حساس رہنے دے
خون جگر نکال لے، پانی نچوڑ لے
لیکن متاع دل کو مرے پاس رہنے دے
یہ شاعر غزل کی متاع لطیف ہے
احساس کے دیار میں احساس رہنے دے
گزرے گی پھر بہار اسی راہ سے رقیب!
سوکھی ہوئی زمین پہ کچھ گھاس رہنے دے
اخترؔ ہوا سمجھ کے اڑا تو نہ اب اسے
خوش رنگ ایک پھول ہے، بو باس رہنے دے
****

 
Comments


Login

You are Visitor Number : 395