donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Kalim Akhtar
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* بہ شوق دیدہ و نادیدہ خواب لکھنے آ *

 

غزل
 
بہ شوق دیدہ و نادیدہ خواب لکھنے آ
یہ سادہ دل ہے، محبت کا باب لکھنے آ
لچک کے ٹوٹ  گئی شاخ شاد مانی  کی 
ہنوز بستہ کلی ہوں، گلاب لکھنے آ 
عجب ہے دھند امید و یقیں کے چہرے پر
اس آئینے پہ کوئی آب و تاب لکھنے آ
یہ پیچ وخم بھی عجب ہے، ترے سوالوں میں
اُلجھ رہاہے مرا دل، جواب لکھنے آ
شب فراق گزاری ہے ہم نے برسوں برس
اے ساقیِ غمِ دل! آ، شراب لکھنے آ
کہیں سے بنتی نہیں ہے عذاب کی صورت
گناہگار ترا ہوں،۔ عتاب لکھنے آ
قلم کے زور پر اب کیا رقم کرے راقم
 کوئی       تو       حرف        میں       روشن          کتاب        لکھنے     آ
********   
 
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 350