donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Khalid Malik Sahil
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* محبتوں میں عجب حادثے ہیں وحشت کے *
محبتوں میں عجب حادثے ہیں وحشت کے
کہ ہر قدم پہ کئی راستے ہیں وحشت کے
 
ترے فراق میں وہ سلسلے ہیں وحشت کے
کہ دائرے میں کئی دائرے ہیں وحشت کے
میں اپنے آپ سے بچھڑا تو ہار جاؤں گا
کہ میری ذات میں کچھ معرکے ہیں وحشت کے
اداس چاند ہے سہما ہوا ہے پانی بھی
مری نگاہ میں دو آئینے ہیں وحشت کے
مزاج اور ہے عاشق مزاج لوگوں کا
یہاں تو عشق میں بس تجربے ہیں وحشت کے
نظر ملائی تو احوال یہ کھلا ساحلؔ
غریقِ عشق سہی فائدے ہیں وحشت کے
*******
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 350