donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Khalid Malik Sahil
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* نظم چہرہ ۔ بے چہرہ *
نظم چہرہ ۔ بے چہرہ 


روشنی کے آنگن میں 

تیرگی کے سائے ہیں 

ٹوٹے پھوٹے چہرے ہیں 

ٹوٹے پھوٹے چہروں پر عکس اپنا تکتا ہوں 

بے وجو د جسموں پر 

ناز کرتی آنکھیں ہیں 

ناز کرتی آنکھوں میں 

بے شمار باتیں ہیں 

بے شمار باتوں میں 

ایک بات میری ہے 

ٹوٹے پھوٹے چہروں میں 

ایک چہرہ میرا ہے 

بے وجود جسموں میں 

ایک جسم میرا ہے 

روشنی کے آنگن میں، تیرگی کا سورج ہے 

تیرگی کے پردے میں 

خواب کی ہلاکت ہے 

خالد ملک ساحل 
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 337