donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Khalid Malik Sahil
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* اپنے آنسو ہیں، تمہارے نہیں رو سکت *
اپنے آنسو ہیں، تمہارے نہیں رو سکتا میَں
آج آنکھوں سے ستارے نہیں رو سکتا میَں
 
ایک تکلیف کا دریا ہے بدن میں لیکن
بیٹھ کر اس کے کنارے نہیں رو سکتا میَں
 
میَں ہوں مجذوب مرے دل کی حقیقت ہے الگ
لاکھ ہوتے ہوں خسارے نہیں رو سکتا میَں
 
جسم ہے رُوح کی حدّت میں پگھلنے والا
یوں شرابور، شرارے نہیں رو سکتا میَں
 
میَں تماشا ہوں تماشائی ہیں چاروں جانب
شرم ہے، شرم کے مارے نہیں رو سکتا میَں
 
بدگماں ہونے لگا ہے یہ تیقّن کا جہاں
مجھ کو افسوس ہے پیارے نہیں رو سکتا میَں
 
زرّے زرّے میں قیامت کا سماں ہے ساحلؔ
ایک ہی دل کے سہارے نہیں رو سکتا میَں
*******
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 333